Top Panel
You are here: HomeNewsItems filtered by date: June 2015
Items filtered by date: June 2015 - Islamic Media J & K

٠٣/جون

 سرینگرجموں میں مسلمانوں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ بڑے پیمانے پر جاری ہے۔ کہیں جنگلات اراضی کو واگزار کرانے کے نام پر دور دراز علاقوں میں بسنے والے غریب مسلمانوں کو بستیوں سے پولیس کی مدد سے نکالنے کا ایک سلسلہ شروع کیا گیا اور کہیں گائے وغیرہ ذبح کے لئے فروخت کرنے کے نام پر انہیں تنگ کیا جارہا ہے اور جھوٹے اور بے بنیاد کیسوں میں پھنسانے کی کوششیں کی جارہی ہیں ۔ کئی مقامات پر مسلمانوں کی اراضی خاص کر وقف اراضی پر مندر بنانے کی کوششیں کی گئیں اور اس کے خلاف احتجاج کرنے والوں کو غنڈوں کے ذریعے ڈرانے دھمکانے کا حربہ استعمال کیا جارہا ہے۔ دراصل جموں صوبے میں فرقہ پرست عناصر، وہاں سے اقلیت میں بسنے والے مسلمانوں کو ہجرت کرنے پر مجبور کرنے کے منصوبوں کو عملا رہے ہیں ۔ جب سے جموں صوبے میں آر ایس ایس ، بی جے پی کا گٹھ جوڑ گزشتہ اسمبلی انتخابات میں واضح اکثریت حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا تب سے فرقہ پرست عناصر وہاں کے مسلمانوں کو ہر طرح سے خوفزدہ کرنے پر تلے ہوئے ہیں ۔ اب مسلمانوں کے قبرستان پر جبری قبضہ کرنے کے بہانے ڈھونڈے جارہے ہیں اور وہاں کی انتظامیہ اور پولیس مسلمانوں کی جان و مال اور عزت کو تحفظ فراہم کرنے میں جان بوجھ کر ٹال مٹول کررہے ہیں جس کے نتیجہ میں وہاں مسلمانوں کے اندر ایک قسم کی دہشت چھائی ہوئی ہے۔ تحصیل بشنا کے باغ جوگیاں گاؤں میں شیوسینا کے کارکنوں مسلمانوں کے قبرستان پر جبری قبضہ کرنے کی خاطر اس پر’’دنگل‘‘ کرنے کا پروگرام بنارہے ہیں حالانکہ ایسا کرنا مسلمانوں کے دینی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے مترادف ہے۔ یہ معاملہ حکام اور پولیس کی نوٹس میں بھی لایا گیا لیکن اُن کی طرف سے کوئی مثبت جواب نہ آیا بلکہ اندرونی طور پر وہ بھی ان فرقہ پرست عناصر کی حمایت کررہے ہیں ۔

Published in News
جنرل السیسی دوحاضر کا بدترین ڈکٹیٹر ہے، اُن کے تمام اقداما ت اسلام دشمنی پر مبنی ہیں// جماعت
سرینگر//مصر کی غاصب فوجی حکومت جس کی سربراہی دوحاضر کی بدترین ڈکٹیٹر جنرل السیسی کررہا ہے نے حال ہی میں ایک اور اسلام دشمنانہ قدم اُٹھا کر ، اپنی رسوائی کا سامان کیا ہے، جس کے مطابق اخوان المسلمون سے وابستہ علماءکرام خاص کر شہید حسن البناءشہید ، شہید سید قطب، یوسف القرضاوی اور دیگر چوٹی کے اسکالر شامل ہیں کی لکھی ہوئی تمام اسلامی کتابوں کو ضبط کرنے اور پھر جلانے کا ایک چنگیزی حکمنامہ صادر کیا ہے۔ اس کے علاوہ عالم اسلامی کے ایک عظم مفکر اور اقامت دین کے داعی اور جماعت اسلامی کے بانی مولانا سیّد ابو الاعلیٰ مودودی کی تحریرکردہ کتابوں کے متعلق بھی یہی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ ایک وقت چنگیز خان نے بھی بغداد پر یورش کرکے، وہاں کی عظیم اسلامی لائبرئری کو جلا کر راکھ کر دیا تھا اور اُسے یہ خیال تھا کہ شاید اب کوئی اسلام کا نام لیوا نہیں رہے گا لیکن تاریخ نے دیکھ لیا کہ ان شیطانی حرکتوں سے اسلام کا کاروانِ حق نہ کبھی رکا ہے اور رُک سکتا ہے۔ البتہ ایسے ہتھکنڈے اسلام دشمن قوتوں کی رسوائی کا باعث بن جاتے ہیں۔ اخوان المسلمون کی یہ کتابیں دنیا کے کونے کونے میں چھپ کر ، نور حق کی اشاعت کا مقدس کام کررہی ہیں اور یہ نورحق پھونکوں سے بجھانے کی کوشش کرنے والا بددماغ اور بے وقوف ہی کہلا یا جاسکتا ہے۔ ۲۱۰۲ئ میں مصری عوام کی عظیم اکثریت نے ڈاکٹر محمد مرسی کو صدارت کی کرسی پر فائز کیا اور وہاں کی پارلیمنٹ میں اخوان المسلمون سے وابستہ بڑے بڑے اسکالروں کو بطور ارکان کثیر تعداد میںپہنچا دیا لیکن طاغوت کی سازشوں کے تحت اور عرب مطلق العنان حکمرانوں کے تعاون سے اس منتخب شدہ اسلامی حکومت کو صرف ایک سال بعد ہی ایک فوجی بغاوت کے ذریعے گرا دیا گیا اور ایک یہودی نواز امریکی ایجنٹ جنرل السیسی کو زبردستی کرسی ¿ صدارت پر بٹھا دیا گیا۔ اس فوجی انقلاب میں ہزاروں بے گناہ مصری مسلمانوں کا خون بہایا گیا اور ہزاروں کی تعداد میں اخوان المسلمون کے بڑے بڑے رہنماو ¿ں کو صدر مرسی سمیت جیلوں میں نظر بند کر دیا گیا اور بعد میں نام نہاد عدالتوں میں جھوٹے مقدمات دائر کرکے، انہیں پھانسی کی سزائیں سنوائی گئیں حالانکہ انہوں نے اس کے سوا کوئی قصور نہیں کیا ہے کہ وہ اسلامی خلافت کا احیا چاہتے ہیں۔
جماعت اسلامی جموں وکشمیر مصری ڈکٹیٹر کے اس تازہ گناہ عظیم پر اُس کو ملامت زدہ قرار دیتے ہوئے، اسلامی کتب کو جلانے کے فیصلے کی توہین دین سمجھتی ہے اور عالم اسلام کے تمام علماءکرام اور دانشور حضرات سے اپیل کرتی ہے کہ اسلام کے خلاف جنرل السیسی کی اس توہین آمیز کارروائی کی کھلے عام مخالفت کریں اور اس کے خلاف بھر پور احتجاج کرکے اپنی ناراضگی کا اظہار کریں۔
Published in News
یورنیورسٹی طلباءو طالبات کے خلاف اور جامع مسجد میں پولیس کارروائیاں افسوسناک// جماعت
سرینگر//وادی کے سب سے اعلیٰ تعلیمی ادارہ ¿ کشمیر یونیورسٹی کے بعد اب وادی کے سب سے اہم اور مرکزی دینی ادارہ جامع مسجد سرینگر میں پولیس کے بے جامداخلت اور طاقت کے بے تحاشا استعمال سے واضح ہوتا ہے کہ ایک مظلوم قوم کے اس خطے کو ایک پولیس کالونی میں تبدیل کرنے کا ریہرسل ہورہا ہے اور یہاں کے عوام کی زبانوں کو تالہ بند کرنے کا ایک منصوبہ زیر عمل ہے لیکن باطل اور طاغوت کے ان زرخرید ایجنٹوں نے اہل ایمان کی جرا ¿ت اور ثابت قدمی کا سامنا نہیں کیا ہے۔ یہ اُن کی خام خیالی ہے کہ طاقت کے بے جا اور اختیارات کے ناجائز استعمال سے وہ اس غیور قوم کو زیر کرکے، طاغوت کی غلامی پر رضامند کر سکتے ہیں۔ دراصل ایسے عناصر اپنی شبیہ خراب کرکے اپنے مستقبل کو برباد کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔
کشمیر یونیورسٹی کے ہوسٹلوں سے مقیم طلباءو طالبات کے زبردستی اخراج اور اخراج کی کارروائی کے دوران ان کے خلاف زبان درازی اپنے آپ کو اسکالر اور معمارانِ قوم کہلانے والوں کو کبھی زیب نہیں دیتا ہے۔ یہ آوارہ اور بازاری لوگوں کی زبان، ایک سنجیدہ اور شائستہ انسان ، کجا کہ مسلمان کبھی استعمال نہیں کرسکتا ہے۔ اسی طرح دورانِ ماہ رمضان نمازیوں کے خلاف بے جا تشدد کرکے، پولیس نے کوئی کارنامہ انجام نہیں دیا ہے بلکہ اللہ کی بارگاہ میں حاضری دینے والے اُس کے بندوں پر ظلم کا ارتکاب کرکے اپنے آپ کو قہر الٰہی کا مستحق بنا دیا۔ البتہ اُن کے دنیوی آقا اُن کی ان اسلام دشمنانہ حرکتوں سے خوش ہوکر انہیں دنیوی انعامات سے مالا مال کرسکتے ہیں لیکن آقائے کائنات اُن کی ان حرکتوں پر غضبناک ہوگا جس کا خمیازہ انہیں ضرور بھگتنا پڑے گا۔ باطل ہمیشہ حق کے خلاف اہل حق کے صفوں میں شامل مفاد پرست عناصر کو استعمال کرتا رہا ہے اور اس طرح اہل حق پر انہی کے ہاتھوں ہر ظلم و ہر ستم روا رکھنے کے منصوبوں کو عملاتا رہا۔
جماعت اسلامی جموں وکشمیر ، یونیورسٹی کے ارباب اقتدار کے ساتھ ساتھ یہاں کی انتظامیہ اور پولیس کی ان دین مخالف کارروائیوں کی کڑی مذمت کرتے ہوئے، یونیورسٹی طلبا ءو طالبات اور جامع مسجد کے نمازیوں کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتی ہے۔ نیز جماعت گرفتار طالب علم مزمل کے خلاف لگائے گئے بے بنیاد الزامات کو فوری طور پر واپس لے کر، اُس کی فوری اور باعزت رہائی پر زور دیتی ہے اور آئندہ کسی بھی ادارے میں یوگا جیسے غیر اسلامی پروگرام کے انعقاد سے باز رہنے کا مشورہ دیتی ہے۔
 
Published in News

 

Srinagar: The detention of Muzamil Farooq Dar, s student of the English Department in Kashmir University by the police is a most condemnable act and whosoever is responsible for it, is also condemned in strong terms. This student being a Muslim has peacefully protested against conducting “Yoga Day” in the campus alongwith his other colleagues. Jama’at-e-Islami Jammu and Kashmir reminds the university authorities that it is not Banaas or Nagpur but Kashmir where the majority of population is Muslim and there is no place for holding “Yoga day” and motivating Muslim youths by use of undue influence to participate in it as ‘yoga’ itself goes against the basic tenets of Islam. Why such an importance is given to yoga day when it is not at all acceptable to Muslims? It seems that the university authorities in order to please the present day Indian rulers are conducting such programmes which are quite repugnant to the basic teachings of Islam and such absurd and vulgar activities have no place in the Islamic set-up of life. The Muslims have been commanded to desist from such absurd activities which go quite against the basic rules of modesty. Some pseudo-Muslim intellectuals in order to please the communal rulers for achieving their worldly designs are considering ‘yoga’ as a physical exercise. Such elements are basically responsible for the present-day downfall of the Muslim Ummah as they have always played the role of the agents of the enemies of Islam. One question is asked to the Vice Chancellor sahib, who fortunately hails from a religious dynasty, “Can a Muslim woman perform such activities before a strange person which are part and parcel of yoga”? Have you been assigned the duty of moulding the Muslim students according to Un-Islamic norms and behaviour or to develop and promote their academic talent and faculties? The common masses may be awakened about the real policy.

Published in News

٤٢/جون

نافرمانی کرنے والے قہر الٰہی کا شکار ہوسکتے ہےں جماعت اسلامی


 سرینگرکئی علاقوں میں چند ناعاقبت اندیش مسلمانوں کو رواں ماہ رحمت کی توہین کرتے دیکھا جارہا ہے وہ کھلے عام کھاپی کر اس بات کا ثبوت فراہم کر رہے ہےں کہ نہ انہیں خوف خدا ہے اور نہ مخلوق کی حیا، اور وہ ان دونوں چیزوں سے محروم ہےں اور اس طور وہ ایمان کی بنیادی صفات سے ہی عاری ہےں ۔ شرعی عذر کے تحت کوئی مسلمان روزہ رکھنے سے مستثنیٰ ہوسکتا ہے لیکن اس کا یہ مطلب کبھی نہیں کہ وہ علی الاعلان کھا پی لے بلکہ اُسے ندامت کے ساتھ ایسی جگہ ایسا کرنا چاہےے جہاں کسی عام آدمی کی نظر نہ ہو اور اللہ کے حضور اپنی اس محرومی پر گڑ گڑاتے ہوئے اس مجبوری سے نجات یا عذر کی قبولیت کی دُعا کرنی چاہےے۔ کھلے بازاروں اور ہوٹلوں میں دیکھا جا رہا ہے کہ ہٹے کٹے مسلمان بلا کسی ظاہری عذر کے مزے لے لے کر شکم پروری کر کے اپنی عاقبت کو تباہ کر رہے ہےں جو اللہ کے خلاف بغاوت وسرکشی اور نبی برحق صلی اللہ علیہ وسلم کی کھلی نافرمانی اور اللہ کے قہر عظیم کو دعوت دےنے کے مترادف ہے۔

Published in News

٣٢/جون

پولیس زیادتیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی،نوجوان کو بلاوجہ گولی مار دی گئی

 سرینگرجماعت اسلامی جموں وکشمیرکا ایک اعلیٰ سطحی وفد آج ناظم شعبہ سیاسیات ایڈوکیٹ زاہد علی کی سربراہی میں کولگام گیا جہاں انہوں نے کل فورسز کے ساتھ ایک مقابلے میں شہید ہوئے نوجوانوں کے لواحقین کے ساتھ تعزیت کی ۔ وفد نے دونوں عسکریت پسندوں جاوید احمد بٹ ولدعبدالرحمان بٹ ساکن ریڈونی بالا اور ادریس حسن نگرو ولد غلام حسن ساکن بدرو کولگام کے علاوہ آصف احمد تانترے ولد عبدالرشید تانترے کے لواحقین کے ساتھ تعزیت کی۔ اس موقعہ پر وفد نے پولیس زیادتیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ، وہاں مقامی لوگوں نے وفد کو بتایا کہ چار بہنوں کے اکلوتے بھائی آصف احمد تانترے کو جھڑپ سے دور اپنے گھر سے نکلتے ہوئے فورسز اہلکاروں نے گولیوں سے چھلنی کردیا اور اُنہیں بلاوجہ جان بوجھ کر موت کی گھاٹ اُتار دیا گیا۔ مقامی لوگوں نے یہ بھی بتایا کہ عسکریت پسند کھلے میدان میں فورسز اہلکاروں کا مقابلہ کررہے تھے لیکن اس کے باوجود جان بوجھ کر ایک مکان کو بارود سے اُڑا کر زمین بوس کردیا گیا۔ اس کے علاوہ فورسز اہلکاروں نے ریڈونی میں مقامی دکانداروں کے دکانات میں لوٹ مچائی قیمتی سامان چرانے کے علاوہ باقی پڑا سامان تہس نہس کردیاگیا اور مقامی لوگوں کی بلاوجہ شدید مارپیٹ کر کے علاقے میں خوف و دہشت کا ماحول پیدا کیا۔ جماعت وفد نے پولیس اور فورسز اہلکاروں کی جانب سے کی جانے والے اس ظلم و زیادتی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی کارروائیوں کا مقصد کشمیری عوام کے جذبۂ حق خودارادیت کو کمزور کرنا ہے۔وفد میں امیر تحصیل کیموہ غلام محمد کے علاہ زعیم جماعت غلام محمد ڈار ساکن آرونی بھی شامل تھے۔ اس کے علاوہ امیر ضلع کولگام نے کل ہی علاقے کا دورہ کرکے لواحقین کے ساتھ تعزیت کی۔

Published in News

Muslim Deeni Mahaz started signature campaign for release of Political Lifers including that of Dr. Muhammad Qasim and after successfully completing its first round in Srinagar, fixed the requisite banners in Budgam and Pulwama but the police removed these banners forcibly without assigning any reason at all. This police action is quite against the basic human rights of freedom of speech and free expression. The police is meant for safeguarding the basic rights of the people but in this unfortunate part of the globe, quite reverse is observed and this force is being used by the ruling politicians just for safeguarding their vested political interests in quite disregard to the very purpose of its creation.

Published in News

Srinagar: Yoga is not a simple exercise but a religious exercise cum prayer of a particular polytheistic community in which besides physical exercises, some religious practices of this particular community are intermixed. During yoga some words are recited which contradict the basic faith of Islam and as such are blasphemous for Muslims. Furthermore at the start of yoga, the participants bow before the sun or any other creature which is not only prohibited in Islam but also a mortal sin. This whole exercise also includes some particular religious signs and customs and as such resembles paganistic rituals. So in the present form, a Muslim should not adopt this type of exercise at all. There are so many more useful methods of the physical exercise for fitness which can be adopted to seek the required purpose. Furthermore, it is mandatory for every Muslim to start his all activities with the recitation of the name of Allah, the creator of this whole universe. So far as Namaz (Salah) is concerned, it is simply a prayer, the best form of worshipping Allah and whatever is recited in it reminds us that we are the obedient slaves of Allah alone and it has no resemblance with yoga or any other exercise whatsoever. Anybody comparing Namaz with yoga can only be termed as the most ignorant person on this globe.

 

Jama’at-e-Islami Jammu & Kashmir cautions the Muslims not to be swayed away by any propaganda and remain firmly attached to their faith in Islam which provides the best guidance for the human beings in general.

Published in News

ousted under an international pan of anti-Islamic forces, Ikhwanul Muslimeen supreme leader Mohammad Badie along with his one hundred top associates to death is not only a mockery of the justice but a blatant violation of the basic human rights. The present military dictator and illegal president of Egypt Al-Sisi has killed thousands of peaceful protesters throughout the Egypt and even hundreds of prisoners were also killed in different jails and interrogation centers but the world and the Middle-East monarchies are playing the role of a mute spectator and supporting this military dictator who crucified the democracy in broad daylight. But the time takes its turn and the tyrants are subjected to the worst kind of punishment like Pharaohs, amroods, Abu Jahls etc. and the oppressed get the divine help. The same treatment was meted out to Najmuddin Arabakan and his associates once in Turkey but in the long run, the supporters of the truth triumphed and perpetrators of the tyranny were defeated and all their plans to thwart the way of the truth utterly failed. Jamaat-e-Islami J&K vehemently condemns the unjustified, unwarranted, illegal and unjust decisions of the puppet courts of Egypt sentencing Dr. Mursi, Mohammad Badie and their associates to death and urges upon the justice-loving people and organizations to stand against this injustice perpetrated upon the innocent personalities at the behest of the world imperialistic powers and the Middle-East monarchies who in case wants an Islamic revolution in the Muslim world.

Published in News

Srinagar: The mysterious serial killings of innocent but freedom loving youth in the sopore area by the so called unidentified gunmen, indicates that all this is a part of a well-thought plan to terrorise the common masses here and thereby crush their peaceful and democratic voice for their basic right of self-determination and the revival of the Islamic system of life in this region. The killers are committing these heinous crimes in the broad day light which speaks volumes about the sponsors of these killers. The recent statement of the Indian Defense Minister Mr. Manohar Parikar that “terrorism can only be combated by terrorism” supports the public view point that these killings are government sponsored in order to create a reign of terror in the valley just on the pattern of the illegal Jewish occupants in Palestine.

Published in News
Page 1 of 2

Al'Quraan

The woman and the man guilty of illegal sexual intercourse, flog each of them with a hundred stripes. Let not pity withhold you in their case, in a punishment prescribed by Allah, if you believe in Allah and the Last Day. And let a party of the believers witness their punishment. (This punishment is for unmarried persons guilty of the above crime but if married persons commit it, the punishment is to stone them to death, according to Allah's Law).

Al'Quraan Surah Noor

Prophet Mohammad PBUH

Narrated: Abu Huraira (R.A) that a man said to the Prophet, sallallahu 'alayhi wasallam: "Advise me! "The Prophet (PBUH) said, "Do not become angry and furious." The man asked (the same) again and again, and the Prophet said in each case, "Do not become angry and furious." [Al-Bukhari; Vol. 8 No. 137]

Sunan Abu-Dawud.

eXTReMe Tracker