Top Panel
You are here: HomeNewsItems filtered by date: November 2015
Items filtered by date: November 2015 - Islamic Media J & K

News reports have revealed the Egyptian government’s intention to fire nearly 4,000 public and private sector employees on charges of affiliation with the Muslim Brotherhood. The Interior Ministry also announced yesterday, in two separate statements, its arrest of 60 members of the Brotherhood on charges of gathering to protest next 25 January, to mark the fourth anniversary of the 2011 revolution.

Alyoum7 newspaper reported yesterday that the arrests occurred after members of the Muslim Brotherhood were implicated in the disastrous flooding of Alexandria that caused several deaths.

The newspaper quoted unnamed sources as saying that over 4,000 Brotherhood leaders are still present in various neighbourhoods and municipalities as directors, ministry representatives, or heads of sectors.

The newspaper also reported that the Minister of Local Development Ahmed Zaki Badr tasked the ministry’s investigations agency with making a list of the names of individuals associated with the Muslim Brotherhood who currently hold leadership positions in order to send it to the monitoring parties.

According to Alyoum7, the sources reported that the monitoring parties are supervising the plan to fire the Brotherhood members and that the plan is due to be presented to the prime minister. This will then be submitted to the president’s administration for review before measures are taken in this regard.

According to reports by monitoring parties, the number of Muslim Brotherhood members working in municipality offices and the Local Development Ministry has exceeded 800, and that the “purging” process will be carried out by firing Brotherhood leaders from any vital position in the state.

Published in News

Prominent Muslim scholar Dr Yusuf Al-Qaradawi has downplayed the significance of the Israeli government’s decision to ban the Islamic Movement inside Israel, saying that he is fully convinced that Palestine will return to its people. “I swear to God that the Al-Aqsa Mosque and Palestine will return to its people,” he said, stressing that this is “God’s promise.”

 

Writing on social media, the head of the World Federation of Muslim Scholars asked, “Does Israel believe that it will extinguish Al-Aqsa’s flame in the hearts of the Palestinians by banning the Islamic movement?” Shaikh Raed Salah and the Islamic Movement will return, he added.

 

On the occupation's decision to ban the movement on charges of inciting Muslims to defend Al-Aqsa, Qaradawi pointed out that Muslims, Palestinians and Arabs do not need “incitement” to defend Al-Aqsa. “It is engraved on the hearts of every one of us. The Islamic movement is an idea that is lingering in the soul. Its mission to protect Al-Aqsa Mosque is the cause of every Muslim, Arab and Palestinian. It will not go away by a banning decision [by Israel].”

 

The Secretary-General of the scholars’ organisation, Shaikh Ali Qara’ Dagi, had warned earlier that the Zionist occupiers are targeting unarmed Palestinians everywhere, including those in hospital. Their only “crime” is trying to defend their occupied land in accordance with Islamic and international law, he pointed out. The official condemned Israel for demolishing Palestinian homes under false and illegal pretexts, amid a global silence that raises many question marks.

 

"The free world and international organisations, especially the Organisation of Islamic Cooperation, the United Nations and the Arab League,” insisted the shaikh, “should act to stop the repeated Zionist attacks against Palestinians, their homes and the sanctities of the nation.” He stressed that the occupation brings only devastation and destruction to the people.

Published in News

۹۱ نومبر۵۱۰۲ئ؁
ظلم کو عدل سے تعبیر کرکی، بنگلہ دیشی عدالت نے عدل کا مفہوم ہی تبدیل کیا ہی// جماعت
 سرینگر//بنگلہ دیش سپریم کورٹ نے جس طرح سے سیکریٹری جنرل جماعت اسلامی اور سابق پارلیمنٹ ممبر علی احسن محمد مجاہد اور بنگلہ دیش نیشنل پارٹی کے ایک معروف لیڈر صلاح الدین قادر چودھری کی اُن کو نام نہاد جنگی جرائم ٹریبونل کی طرف سے دی گئی سزائے موت کے خلاف نظر ثانی کی درخواستوں کو رد کیا ، اس سے عدالتی انصاف پر سے لوگوں کا اعتماد ہی ختم ہوتا ہے کیونکہ جن الزامات کی بنیاد پر یہ خوفناک سزائیں دی گئی ہیں اُن کی کوئی بنیاد ہی نہیں بلکہ وہاں کی عوامی لیگ حکومت کی طرف سے اسلام پسندوں اور حزب اختلاف کو منظر عام سے ہٹانے کی ایک سازش ہی۔ بنگلہ دیشی اعلیٰ عدالت کے اس فیصلے سے واضح ہوتا ہے کہ وہاں کی عدالتیں بھی حکومتی اثر ورسوخ میں ہیں اور سیاسی انتقام گیری کے لیے استعمال ہوتی ہیں۔۱۷۹۱ئ؁ میں بنگلہ دیش کے وجود میں آنے کے وقت کی کارروائیوں کو بنیاد بناکر جس طرح نام نہاد انٹرنیشنل وار کرائمز ٹریبونل کا قیام عمل میں لایا گیا اس پر دنیا بھر کے ماہرین قانون و انصاف نے سخت اعتراضات کرکے ان کو عدالت ماننے سے ہی احتراز کیا ہی۔ اس ٹریبونل نے انصاف کے بنیادی تقاضوں کو جس طرح پامال کیا ہے اس کی بہت ہی کم مثالیں دُنیا کے ظالم ترین نظام حکومتوں میں ملتی ہیں۔ ظلم کو عدل سے تعبیر کرکی، بنگلہ دیشی عدالت نے عدل کا مفہوم ہی تبدیل کیا ہے او ر عدالتوں کو سیاسی انتقام گیری کا ایک ذریعہ بناکر رکھ دیا ہی۔
جماعت اسلامی جموں وکشمیر شیخ حسینہ حکومت کی طرف سے بنگلہ دیش کے اسلام پسندوں اور حزب اختلاف کے خلاف شروع کی گئیں سیاسی انتقام گیری پر مبنی کارروائیوں کو انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزی او رحکومتی دہشت گردی سے تعبیر کرتے ہوئے اس کی کڑی مذمت کرتی ہے او رعدل و انصاف سے متعلق عالمی اداروں کو اس صورتحال کا سنگین نوٹس لینے کی اپیل کرتی ہی۔

Published in News

Srinagar: Jama’at-e-Islami Jammu and Kashmir strongly condemned the brutal action by 14 RR  army personnel on innocent people in Bandipora which left five persons injured severely including two women and termed it blatant violation of human rights. Jama’at spokesperson Advocate Zahid Ali said in a statement that these kinds of atrocities are now common and a routine task by army in Kashmir. He said during nocturnal raids army and other forces ransack residential houses and beat inmates ruthlessly. Later when people protest against this inhuman and brutal action, they are reciprocated by the use of unjustified force by government forces.

Published in News

Srinagar/ International Muslim Unity Council organized a Hijab campaign at M A Road in which mothers.. sisters.. and daughters were appreciated by presenting gifts to them and printed material for being in Hijab. This was the first initiative of its kind taken by the organization to inspire women folk to maintain sanctity of Hijab the campaign held by the council has been held for the first time in Kashmir valley which was responded very positively across. The council drew the attention of people on the significance of Hijab which is need of the time and is the religious practice across all faiths and Muslim in particular. Moreover, the IMUC made outlined that Kashmir is the valley of saints and the essence of Hijab is in the blood, Islamic culture which is the heritage of this place and that has been manipulated by westernization. Campaign stressed to practice the Hijab as an Islamic ethic and to maintain its sanctity

Published in News

Srinagar: A delegation of Jama’at-e-Islami Jammu & Kashmir comprises of Advocate Zahid Ali, Niyaz Ahmad and Khalid Bashir visited Mustafabad, HMT and expressed solidarity with the family of Slain youth Gowhar Nazir Dar. Gowhar Nazir Dar was hit by a teargas shell fired by CRPF personnel on November, 7. While speaking at the occasion, Advocate Zahid Ali expressed solidarity on behalf of Jama’at and express grave concern on the death of Gowhar. While condemning the act, he said Gowhars killing is a worst kind of state terrorism. Oppressive forces are not in a mood to let the oppressed people of state to express their anger against this state sponsored terror. Jama’at demands an impartial judicial probe of this heart rending incident so that men in uniform who are involved in this brutal act are given exemplary punishment. People here have been suffering for demanding their basic right of self-determination since 1947 and it is the main cause of their oppression and suppression by the Indian forces.

 

 

Published in News

ساتھی طالب علم کی شہادت پر احتجاج اُن کا بنیادی حق ہے// جماعت اسلامی
سرینگر//ایس ایس ایم کالج کے پُر امن طلبا جو اُن کے ساتھی طالب علم گوہر نذیر ڈار کی سی آر پی ایف اہلکاروں کے ہاتھوں قتل کیے جانے کی ظالمانہ کارروائی کے خلاف احتجاج کررہے تھے، پر پولیس کی طرف سے طاقت کے بے تحاشا استعمال کو بربریت سے تعبیر کرتے ہوئے جماعت اسلامی جموں و کشمیر اس کی کڑی مذمت کرتی۔ ایک طرف بھارتی حکمران سب سے بڑی جمہوریت ہونے کے مدعی ہیں لیکن وادی کشمیر میں جمہوریت کا گلا ہی گھونٹ دیا گیا ہے اور یہاں بدترین آمریت کا دور دورہ ہے اور عوام کا جینا ہی محال کردیا گیا ہے۔ بے گناہ نوجوانوں کو چُن چُن کرقتل کرنے کا ایک لامتناہی سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجہ میں ہزاروں خانوادوں کے لاڈلے جوانی کے عالم میں ہی جان بحق کردئیے گئے اور اُن کے والدین اور دیگر اقربا کو تاحیات رونے کے لیے چھوڑ دیا گیا ہے۔ ابھی تک اس سلسلے میں نہ ہی بین الاقوامی ادارے ہی کوئی انصاف فراہم کرسکے او ر نہ ہی مقامی عدالتیں عدل کے تقاضوں پر کھرے ثابت ہوئیں۔ سرکاری انتظامیہ نے تحقیقاتی کمیشنوں کی آڑ میں عوام کو دھوکے میں رکھا اور آج تک کسی بھی کیس میں کسی ملوث اہلکار کو کوئی قابل ذکر سزا ہی نہ ملی۔ ہزاروں کشمیری انصاف کے لیے تڑپ رہے ہیں اور اُس دن کے منتظر ہیں جب انہیں عدل اور ظالموں کو قرار واقعی سزا ملے۔ جماعت اسلامی جموں وکشمیر انسانی حقوق سے متعلق عالمی اداروں خاص کر تنظیم برائے اسلامی ممالک سے پُر زور اپیل کرتی ہے کہ بھارتی فورسز کے ذریعے یہاں کے نوجوانوں کے قتل عام کا فوری نوٹس لے کر، اس سلسلے کو رُکوانے کی خاطر ٹھوس اور مؤثر اقدامات کریں۔

Published in News

ملوث اہلکاروں کو عبرت ناک سزا دینے کا مطالبہ
سرینگر//جماعت اسلامی جموں وکشمیر نے مصطفے آباد ایچ ایم ٹی میں سی آر پی ایف اہلکاروں کے ہاتھوں ایک بے گناہ طالب علم گوہر نذیر ڈار کے قتل پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے اور بھارتی فورسز کی اس کارروائی کو ظلم و جبر کی ایک واضح مثال قرار دیتے ہوئے اس کی کڑی مذمت کرتی ہے۔ جماعت کا ایک وفد ناظم سیاسیات ایڈوکیٹ زاہد علی‘ اُمرائے تحصیلات سرینگر نیاز احمد اور خالد بشیر پر مشتمل شہید کے لواحقین سے مکمل یکجہتی کی خاطر شہید گوہر کے گھر گیا اور اُن کے غمزدہ والد اور دیگر لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا۔ اس موقعہ پر ناظم شعبہ سیاسیات نے اس واقعہ کو جموں وکشمیر میں عوام پر جاری ظلم و بربریت کی ایک کڑی قرار دیتے ہوئے اس کی ایک غیر جانبدارانہ عدالتی کمیشن کے ذریعے تحقیقات پر زور دیا۔ یہاں تعینات بھارتی فورسز کو یہاں کے نوجوانوں کا خون بہانے کی کھلی چھوٹ ملی ہے اور اس کے ذریعے وہ یہاں کے عوام کو اپنے جائز مطالبہ برائے حق خودارادیت سے دستبردارہونے پر مجبور کرنا چاہتے ہیں حالانکہ ظلم و جبر سے حق پر مبنی تحریکوں کو جلا ملتی ہے اور ظالموں کا بہت جلد زوال آجاتا ہے۔اس موقعہ پر موصوف نے کہا کہ اس سانحہ میں ملوث اہلکاروں کو جلد از جلد عبرت ناک سزادے کر کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔

Published in News

حکومت وردی پوش اہلکاروں کو قابو میں رکھے//جماعت اسلامی
سرینگر//بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی کشمیر آمد کے موقعہ پر یہاں کے عوام کو اپنے گھروں میں محسور کرنے کے علاوہ نہتے اور پُرامن مظاہرین پر پولیس اور نیم فوجی دستوں کی جانب سے طاقت کے بے تحاشہ استعمال نے ثابت کردیا کہ ’’خیالات کی جنگ‘‘ لڑنے کا دعویٰ کرنے والی ریاستی حکومت کس قدر کمزور ہے اور طاقت کے بل پر کشمیریوں کو اپنے خیالات کا اظہار کرنے سے روک دینا اُن کی ناکامی کا برملا ثبوت ہے۔ نریندر مودی کے جلسہ کی خاطر فوج اور نیم فوجی دستوں نے جہاں مجبور عوام کا چلنا پھرنا دوبھر کردیا ہے وہیں شام گئے سرینگر کے زینہ کوٹ علاقہ میں ایک انجینئرنگ کے طالب علم گوہر نذیر ڈار ولد نذیر احمد ڈار ساکن مصطفے آباد ایچ ایم ٹی کو راست ٹیر گیس شل کا نشانہ بناکر اس معصوم کو ابدی نیند سلادیا گیا۔ پولیس اور فورسز اہلکاروں کا اب یہ معمول بن چکا ہے کہ وہ یہاں کی نوجوان نسل کو تشدد کا نشانہ بناکر اپنی بربریت کا اظہار کرتے ہیں۔ اس پر المیہ یہ کہ کشمیری عوام کی اس نسل کشی کا پوری دنیا تماشہ دیکھ رہی ہے اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں بھی آنکھیں بند کرکے اپنی دوغلی پالیسی کا ثبوت پیش کررہے ہیں۔ یہاں کی حکومت مالی پیکیجوں کی خاطر کشمیریوں پر ہورہے انسانیت سوز مظالم پر نہ صرف خاموش تماشائی کا رول ادا کررہی ہے بلکہ یہاں کی نوجوان نسل کے قتل عام میں برابر کی شریک ہے۔ پولیس، فوج و نیم فوجی دستوں کو کھلے اختیارات فراہم کئے گئے ہیں اور دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کا دعویٰ کرنے والا ملک اپنے ظلم، جبر و استبداد کو قائم رکھنے کے لیے جمہوریت کی تمام قدروں کو پاؤں تلے روند ے جارہا ہے۔
جماعت اسلامی جموں وکشمیر‘ معصوم طالب علم گوہر نذیر ڈار کی شہادت پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے اس سانحہ کو انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزی قرار دیتی ہے اور حکومت وقت کو مشورہ دیتی ہے کہ وہ ہوش کے ناخن لے کر وردی پوش اہلکاروں کو قابو میں رکھے۔ مزید گوہر نذیر ڈار کے لواحقین سے بھی تعزیت کا اظہار کرتی ہے اور مطالبہ کرتی ہے کہ شہید کے قاتلوں کو عبرت ناک سزا دی جائے۔

Published in News

سرکاری انتظامیہ اور پولیس کو ہوش کے ناخن لینے پر دیا زور//جماعت اسلامی
سرینگر//وادی کشمیر کے طول و عرض میں بھارتی وزیر اعظم مسٹر نریندر مودی کی وادی آمد سے قبل‘ بے گناہ نوجوانوں کی بے تحاشا گرفتاری اور مختلف علاقوں میں شبانہ چھاپوں سے عوام میں ایک ہیجانی کیفیت پیدا ہوگئی ہے اور اُن کا امن و سکون درہم برہم ہوکر رہ گیا ہے۔ سینکڑوں افراد مختلف تھانوں میں کسی قانونی ضابطے کے بغیر محض محکمہ پولیس کی صوابدید پر بلاجواز نظر بند ہیں اور اُن کے اہل وعیال انتہائی پریشان کن صورتحال سے دوچار ہیں۔ پولیس کی یہ ظالمانہ کارروائی جملہ انسانی حقوق کی صریح خلاف ورزی ہونے کے علاوہ تمام قانونی ضابطوں کی کھلی پامالی ہے نیز گرفتاری سے متعلق بھارتی سپریم کورٹ کے واضح ہدایت نامہ کی دھجیاں اُڑانے کے مترادف ہے۔ اس کے علاوہ راہ چلتے لوگوں کا قافیہ اس قدر تنگ کیا گیا ہے کہ لوگوں نے گھروں سے باہر جانا ہی ترک کردیا ہے جس کی وجہ سے سڑکیں سنان دکھائی دیتی ہیں۔ سینکڑوں نوجوان پولیس مظالم سے بچنے کی خاطر‘ اپنے گھروں سے روپوش ہوچکے ہیں جس کی وجہ سے اُن کاتعلیمی کیرئر اور مستقبل داؤ پر لگے ہیں۔ اس طرح وادی ایک پولیس اسٹیٹ کی شکل اختیار کرچکی ہے اور قانون کی حکمرانی کہیں نظر نہیں آتی ہے۔ کئی علاقوں میں پولیس نے راہ چلتے نوجوانوں کو خانہ پری کی خاطر نظر بند کردیا ہے اور امن و امان کے قیام کے نام پر بدامنی اور لاقانونیت کو فروغ دیا جارہا ہے۔ جگہ جگہ پر پولیس کی تعیناتی سے لگ رہا ہے کہ کوئی بڑی جنگ ہونے والی ہے اور ایمرجنسی کا نفاذ ہوچکا ہے جس کی وجہ سے عوام دہشت زدہ ہیں اور جمہوریت نام کی کسی چیز کا دور دور کوئی نشان نظر نہیں آرہا ہے۔
جماعت اسلامی جموں وکشمیر‘ اس گھمبیر صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے یہاں کی سرکاری انتظامیہ اور پولیس کو ہوش کے ناخن لینے پر زور دیتے ہوئے‘ بلا وجہ گرفتاری کے اس غیر جمہوری چکر کو ترک کرنے اور تمام گرفتار شدہ نوجوانوں اور گھروں میں نظر بند زعمائے حریت کی فوری رہائی کا مطالبہ کرتی ہے۔ نیز پرامن عوامی احتجاج کے راستوں کو مسدود کرنا‘ جمہوریت کو پاؤں تلے روندنے کے مترادف ہے جس کے بہت ہی بُرے نتائج نکلنے کے امکانات ہیں۔ نیز جماعت اسلامی‘ عوامی خواہشات کو دبانے کے حکومتی اقدام کو ظالمانہ قرار دے کر اس کی کڑی مذمت کرتی ہے۔

Published in News
Page 1 of 2

Al'Quraan

The woman and the man guilty of illegal sexual intercourse, flog each of them with a hundred stripes. Let not pity withhold you in their case, in a punishment prescribed by Allah, if you believe in Allah and the Last Day. And let a party of the believers witness their punishment. (This punishment is for unmarried persons guilty of the above crime but if married persons commit it, the punishment is to stone them to death, according to Allah's Law).

Al'Quraan Surah Noor

Prophet Mohammad PBUH

Narrated: Abu Huraira (R.A) that a man said to the Prophet, sallallahu 'alayhi wasallam: "Advise me! "The Prophet (PBUH) said, "Do not become angry and furious." The man asked (the same) again and again, and the Prophet said in each case, "Do not become angry and furious." [Al-Bukhari; Vol. 8 No. 137]

Sunan Abu-Dawud.

eXTReMe Tracker