Print this page
Tuesday, 10 November 2015 18:13

ایس ایس ایم طلباء پر طاقت کا استعمال بربریت کا مظاہرہ ہے

Rate this item
(0 votes)

ساتھی طالب علم کی شہادت پر احتجاج اُن کا بنیادی حق ہے// جماعت اسلامی
سرینگر//ایس ایس ایم کالج کے پُر امن طلبا جو اُن کے ساتھی طالب علم گوہر نذیر ڈار کی سی آر پی ایف اہلکاروں کے ہاتھوں قتل کیے جانے کی ظالمانہ کارروائی کے خلاف احتجاج کررہے تھے، پر پولیس کی طرف سے طاقت کے بے تحاشا استعمال کو بربریت سے تعبیر کرتے ہوئے جماعت اسلامی جموں و کشمیر اس کی کڑی مذمت کرتی۔ ایک طرف بھارتی حکمران سب سے بڑی جمہوریت ہونے کے مدعی ہیں لیکن وادی کشمیر میں جمہوریت کا گلا ہی گھونٹ دیا گیا ہے اور یہاں بدترین آمریت کا دور دورہ ہے اور عوام کا جینا ہی محال کردیا گیا ہے۔ بے گناہ نوجوانوں کو چُن چُن کرقتل کرنے کا ایک لامتناہی سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجہ میں ہزاروں خانوادوں کے لاڈلے جوانی کے عالم میں ہی جان بحق کردئیے گئے اور اُن کے والدین اور دیگر اقربا کو تاحیات رونے کے لیے چھوڑ دیا گیا ہے۔ ابھی تک اس سلسلے میں نہ ہی بین الاقوامی ادارے ہی کوئی انصاف فراہم کرسکے او ر نہ ہی مقامی عدالتیں عدل کے تقاضوں پر کھرے ثابت ہوئیں۔ سرکاری انتظامیہ نے تحقیقاتی کمیشنوں کی آڑ میں عوام کو دھوکے میں رکھا اور آج تک کسی بھی کیس میں کسی ملوث اہلکار کو کوئی قابل ذکر سزا ہی نہ ملی۔ ہزاروں کشمیری انصاف کے لیے تڑپ رہے ہیں اور اُس دن کے منتظر ہیں جب انہیں عدل اور ظالموں کو قرار واقعی سزا ملے۔ جماعت اسلامی جموں وکشمیر انسانی حقوق سے متعلق عالمی اداروں خاص کر تنظیم برائے اسلامی ممالک سے پُر زور اپیل کرتی ہے کہ بھارتی فورسز کے ذریعے یہاں کے نوجوانوں کے قتل عام کا فوری نوٹس لے کر، اس سلسلے کو رُکوانے کی خاطر ٹھوس اور مؤثر اقدامات کریں۔

Read 351 times