Top Panel
You are here: HomeNewsسابق فوجیوں کو بسانے کی منصوبہ بندی اسرائیلی طرز عمل، کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ ہونا ابھی باقی// قیم جماعت
Monday, 10 August 2015 06:55

سابق فوجیوں کو بسانے کی منصوبہ بندی اسرائیلی طرز عمل، کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ ہونا ابھی باقی// قیم جماعت

Rate this item
(0 votes)

۹؍اگست

سابق فوجیوں کو بسانے کی منصوبہ بندی اسرائیلی طرز عمل، کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ ہونا ابھی باقی// قیم جماعت
جماعت اسلامی ضلع بانڈی پورہ کے سالانہ اجتماع میں ہزاروں لوگوں کی شرکت
سرینگر//جماعت اسلامی جموں وکشمیر ضلع بانڈی پورہ کا سالانہ اجتماع آج مرکزی جامع مسجد بانڈی پورہ میں امیر جماعت اسلامی جموں وکشمیر محمد عبداللہ وانی کی صدارت میں منعقد ہوا۔ اس اجتماع میں ضلع بھر سے ہزاروں لوگوں نے شرکت کی۔ دن بھر جاری رہنے والے اس اجتماع میں امیر جماعت محمد عبداللہ وانی نے درس قرآن میں سورہ الفرقان کی آیات کی تشریح کرتے ہوئے مومن مسلمان کی اوصاف حمیدہ بیان کی ہیں۔ موصوف نے کہا کہ اسلام مسلمان کے اندر مومنانہ صفات پیدا کرنا چاہتا ہے۔ قرآن حکیم میں مومن کے جو اوصاف بیان کیے گئے ہیں اُن میں یہ بھی شامل ہیں کہ مومن زمین پر نرم چال چلتا ہے، گھمنڈ نہیں کرتا ہے، فرائض کے ساتھ ساتھ نوافل اور انفاق کا بھی مظاہرہ کرتا ہے، اور اللہ کے حدود کوپھلانگنے والا نہیں ہوتا ہے۔امیر جماعت نے کہا کہ عالمی سطح کے جن مسائل میں اُمت جوجھ رہی ہے اُن کی بنیادی وجہ یہی ہے کہ مسلمان نام کی حد تک مسلمان رہے ہیں اُن میں مومنانہ صفات پیدا نہیں ہورہی ہے۔قیم جماعت اسلامی ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے ریاست میں سابق فوجیوں کو بسانے کے دلّی کے ارادوں پر بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ اسرائیلی طرز عمل ہے۔ جس طرح اسرائیل نے فلسطینی سرزمین کو ہڑپنے کے لیے وہاں اپنے سابق فوجیوں کے لیے کالونیاں تعمیر کی ہیں اور آہستہ آہستہ فلسطینیوں کو اُن کے وطن سے ہی بے دخل کردیا گیا اِسی طرح بھارت ریاست جموں وکشمیر میں اپنی حاکمیت اور قبضہ برقرار رکھنے کے لیے یہاں سابق فوجیوں کو بسانے کی پلاننگ کررہا ہے۔ قیم جماعت نے کہا کہ کشمیری عوام اس طرح کے ارادوں کو کسی بھی صورت میں کامیاب نہیں ہونے دیں گے اور انہوں نے بین الاقوامی برادری سے بھی اپیل کی کہ وہ بھارت کو کشمیر میں اس طرح کی منصوبہ بندی کرکے کشمیردشمن پالیسی اپنانے سے باز رکھیں۔ قیم جماعت نے کہا کہ کشمیر ایک متنازعہ خطہ ہے، ریاست جموں وکشمیر کے مستقبل کا فیصلہ ابھی ہونا باقی ہے اور اپنے مستقبل کا تعین کرنے کی مانگ کشمیری عوام گزشتہ سات دہائیوں سے کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ مسئلہ کشمیر ہی ہے جس کی وجہ سے دو ایٹمی طاقتیں ایک دوسرے کے آمنے سامنے ہیں، دونوں ممالک میں سرحدوں کے قریب رہنے والے لوگ پریشان ہیں اور جب تک نہ مسئلہ کشمیر حل ہوجائے گا، برصغیر کی کروڑوں عوام کے اضطراب اور پریشانیوں میں کمی نہیں ہوگی۔ قیم جماعت نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے لیے کشمیری قوم نے بیش بہا قربانیاں پیش کی ہیں اور تاحال دے رہے ہیں۔ قیم جماعت نے کہا کہ جماعت اسلامی جموں وکشمیر مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قرار دادوں کی روشنی میں حل کرنے کی خواہش مند ہے اور اس کے لیے قوم کے شانہ بشانہ جدوجہد کررہی ہے۔ موصوف نے کہا کہ کشمیر ی قوم نے سہ فریقی مذاکرات کا آپشن بھی کھلا رکھا ہے، اگر کسی وجہ سے اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل آوری ممکن نہ ہوسکے تو پھر سہ فریقی مذاکرات جن میں کشمیریوں کے حقیقی نمائندے شامل ہوں کے ذریعے سے اس مسئلہ کا ایسا حل نکالا جانا چاہیے جو کشمیری عوام کی خواہشات کے عین مطابق ہو۔ریاست بھر میں گرفتاریوں اور کریک ڈاؤن کا سلسلہ شروع کیے جانے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے قیم جماعت نے کہا کہ وردی پوش نوجوانوں کو گرفتار کرکے نہ صرف انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا ارتکاب کررہے ہیں بلکہ کشمیری نسل نو کے تعلیمی کیرئیر کے ساتھ بھی کھلواڑ کیا جارہا ہے۔ آئے روز گرفتاریوں سے نوجوان اور ان کے لواحقین ذہنی کوفت میں مبتلا ہوجاتے ہیں نیز نوجوان خوف و دہشت کی وجہ سے اپنی تعلیم پر توجہ نہیں دے پاتے ہیں۔ اِسی طرح ریاست بھر میں کریک ڈاون کا سلسلہ پھر سے شروع کیا گیا ہے، شناختی پریڈ اور تلاشیوں کے بہانے لوگوں کو ہراساں کرنا انتہائی درجے کا ظلم ہے۔موصوف نے کہاکہ جماعت اسلامی جموں وکشمیر ان گرفتاریوں اور کریک ڈاون کے تسلسل کی کڑی الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے ان کو فوری طور پر روک دینے کا مطالبہ کرتی ہے۔ اساتذہ اور سرکار کے درمیان جاری رسہ کشی پر بات کرتے ہوئے ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے کہا کہ گزشتہ برس کے سیلاب کی وجہ سے پہلے ہی یہاں کے طلبہ کا کافی وقت ضائع ہوچکا ہے، تعلیمی ادارے مہینوں بند رہے اور اب یہ نئی رسہ کشی رہی سہی کسر پوری کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ اور محکمہ تعلیم آپسی افہام و تفہیم کے ذریعے سے اس مسئلے کا جلد از جلد کوئی حل نکالیں تاکہ طلبہ کا قیمتی وقت مزید ضائع نہ ہوجائے۔ موصوف نے گزشتہ دنوں سرکاری اساتذہ کے خلاف پولیس کی جانب سے بے تحاشہ طاقت کا استعمال کیے جانے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اساتذہ قوم کے معمار ہیں اور قوم کے معماران کو اگر اس طرح سڑکوں پر گھسیٹا جائے گا اور ان کے خلاف پلٹ گن جیسا مہلک ہتھیار استعمال کیا جائے گا تویہی کہا جاسکتا ہے یہاں کی حکومت ہر معاملے میں طاقت کا استعمال کرنے کی عادی ہوچکی ہے۔انہوں نے پولیس کی ان کارروائیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ اجتماع میں جن دوسرے مقررین نے خطابات کیے اُن میں نائب امیر جماعت نذیر احمد رعنا، امیر ضلع بانڈی پورہ عبدالغنی موحد، ناظم شعبہ دعوت و تربیت مولانا طارق احمد مکی، معاون ناظم شعبہ دعوت و تربیت غازی معین الاسلام ندوی، معاون امیر ضلع بانڈی پورہ ڈاکٹر سلطان اصلاحی ، سابق امیر ضلع غلام محمد وانی کے علاوہ ناظم اعلیٰ اسلامی جمعیت طلبہ جموں وکشمیر عمر سلطان شامل ہے۔نماز عصر کے ساتھ ہی یہ اجتماع اختتام پذیر ہوا۔

Read 339 times

Al'Quraan

The woman and the man guilty of illegal sexual intercourse, flog each of them with a hundred stripes. Let not pity withhold you in their case, in a punishment prescribed by Allah, if you believe in Allah and the Last Day. And let a party of the believers witness their punishment. (This punishment is for unmarried persons guilty of the above crime but if married persons commit it, the punishment is to stone them to death, according to Allah's Law).

Al'Quraan Surah Noor

Prophet Mohammad PBUH

Narrated: Abu Huraira (R.A) that a man said to the Prophet, sallallahu 'alayhi wasallam: "Advise me! "The Prophet (PBUH) said, "Do not become angry and furious." The man asked (the same) again and again, and the Prophet said in each case, "Do not become angry and furious." [Al-Bukhari; Vol. 8 No. 137]

Sunan Abu-Dawud.

eXTReMe Tracker