Top Panel
You are here: HomeNewsمسئلہ کشمیر کے بارے میں جماعت کا مؤقف اٹل، انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر تشویش
Monday, 08 June 2015 08:44

مسئلہ کشمیر کے بارے میں جماعت کا مؤقف اٹل، انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر تشویش

Rate this item
(0 votes)

٧ جون٥١٠٢ئ؁

اسلام سیاسی قوت کا تقاضا کرتا ہے امیر جماعت

مسئلہ کشمیر کے بارے میں جماعت کا مؤقف اٹل، انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر تشویش

جماعت اسلامی جموں وکشمیر ضلع بارہمولہ(الف) کے سالانہ اجتماع میں ہزاروں لوگوں کی شرکت

سرینگرجماعت اسلامی جموں وکشمیر ضلع بارہمولہ(الف) کا سالانہ اجتماع آج سپورٹس گروانڈکنزر ٹنگ مرگ میں امیر جماعت اسلامی جموں وکشمیر محمد عبداللہ وانی کی صدارت میں منعقد ہوا۔اجتماع میں ضلع بھر سے ہزاروں لوگوں نے شرکت کی۔ درس قرآن کی روشنی میں قیام خلافت کی جدوجہد کو واجب قرار دیتے ہوئے امیر جماعت اسلامی محمد عبداللہ وانی نے کہا کہ سیاسی قوت اسلامی نظام کے قیام کے لیے لازمی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقامت دین کی جدوجہد کے لیے پہلی شرط یہ ہے کہ مسلمان ہر آن خدا سے ڈرنے والی قوم ہو۔دین قائم ہونے کے لیے دوسرا اصول مضبوط و منظم اجتماعیت اور ملی اتحاد انتہائی لازم ہے۔ امیر جماعت نے کہا کہ یہ المیہ ہے کہ اگر چہ ارکان اسلام توحید، نماز ، روزہ ، حج اور زکواۃ سب اجتماعیت کی دعوت دیتے ہیں لیکن افسوس کا مقام ہے کہ مسلمانوں کا اتحاد پارہ پارہ ہے۔ مسلمان نسل، قومیت ، وطنیت اور سماجی رتبے کی بنیاد پر ایک دوسرے کے ساتھ دست گریباں ہیں ۔ محمد عبداللہ وانی نے کہا کہ اُمت مسلمہ کے لیے رشتہ اتحاد اور وحدت کی بنیاد خالص قرآن مجید بن سکتا ہے۔ قرآن مجید کو تمام مسائل کا حل قرار دیتے ہوئے امیر جماعت نے کہا کہ قرآن ہماری زندگی کے اجتماعی و انفرادی مسائل میں ضابطہ حیات ہونا چاہیے ۔ اقامت دین کے لیے لازمی ہے کہ مسلمان لوگوں کو خیر کی دعوت دیں ، نیکیوں پر عوام الناس کو ابھاریں اور پھر سیاسی قوت حاصل ہوجانے کی صورت میں مسلمانوں پر لازمی ہے کہ وہ بدیوں کو روکیں اور بھلائیوں کو طاقت سے ختم کریں ۔ اُمت مسلمہ کو سیاسی طاقت ایک ہی صورت میں حاصل ہوسکے گی جب اُمت مسلمہ بحیثیت مجموعی قیام خلافت کے لیے منظم کوششیں کرے گی۔ امیر جماعت نے کہا کہ امر بالمعروف او رنہی عن المنکر لازم و ملزوم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اسلام کے لیے نظام ضروری ہے اور نظام کے قیام کے لیے ہی جماعت اسلامی گزشتہ چھ دہائیوں سے جدوجہد کررہی ہے۔ اجتماع میں اپنے خطاب عام میں قیم جماعت ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے کہامسئلہ کشمیر عالمی سطح کے مسائل میں ایک اہم مسئلہ ہے۔ اس مسئلے سے براہ راست کشمیری قوم متاثر ہو رہی ہے۔ قربانیاں اس قوم نے دی ہیں اور دے رہی ہے۔ موصوف نے کہا کہ مسائل کے حل کے حوالے سے دنیا دوہرا معیار اپنا رہی ہے۔ جنوبی سوڈان اور ایسٹ تیمور میں مسئلہ عیسائیوں کا تھا ، رائے شماری کرائی گئی۔ فلسطین اور کشمیر کا مسئلہ مسلمانوں کا ہے اقوام متحدہ میں قرار دادیں ہونے کے باوجود اس پر عمل نہیں کیا جاتا ہے۔ قیم جماعت نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے جماعت اسلامی کا مؤقف اٹل اور واضح ہے۔ کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ کی قرار دادوں یا پھر سہ فریقی مذاکرات کے ذریعے سے کشمیریوں کی خواہشات کے عین مطابق حل کیا جانا چاہیے۔قیم جماعت نے جموں میں غریب مسلمانوں کو اپنی زمینوں سے بے دخل کیے جانے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ فرقہ پرست منظم سازش کے تحت جموں کو مسلمانوں سے خالی کرانے کی کوششیں کررہے ہیں اور اسی کوشش کی ایک کڑی یہ ہے کہ جنگلاتی زمین کے نام پر مسلمان علاقوں میں لوگوں کو اپنی گھر اور زمینوں سے بے دخل کیا جارہا ہے۔ ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے کہا کہ یہ جموں ہی نہیں بلکہ ہندوستان کی دیگر ریاستوں میں بھی مسلمانوں کا قافیہ حیات تنگ کیا جارہا ہے۔ ابھی تک ہندوستان میں تیس ہزار سے زائد مسلم کش فسادات ہوئے ہیں اور آج بھی مختلف حیلوں او ربہانوں کی آڑ میں مسلمانوں کو تنگ طلب کیا جارہا ہے۔ جس کی سینکڑوں مثالیں پیش جاسکتی ہیں ۔ جموں میں ایک سکھ نوجوان کی ہلاکت کو انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے قیم جماعت نے کہا کہ پرامن جلوس پر گولیاں چلانا یہاں کی روایت بن چکی ہے اور جماعت اس کی مذمت کرتی ہے۔ جموں واقعے نے حکومت کے دوہرے معیار کو بھی بے نقاب کردیا ہے۔ سکھ نوجوان کی ہلاکت کے بعد ذمہ دار اہلکاروں اور افراد کے خلاف فوری طور کارروائی عمل میں لائی گئی جبکہ وادی میں نارہ بل کے سہیل احمد صوفی اور ترال کے مظفر احمد وانی کی شہادت اور اس جیسے درجنوں واقعات میں ملوث وردی پوش دندناتے پھرتے ہیں اور اُن کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی اور یہ جمہوریت کے دعوؤں کی پول کھول دیتی ہے۔ ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے حال ہی میں بی جے پی منسٹر کے اُس بیان جس میں انہوں نے کہا کہ امرناتھ یاترا سال بھر جاری رکھی جاسکتی ہے کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ مذکورہ منسٹر کا یہ بیان خلوص پر مبنی نہیں بلکہ مذہبی منافرت کو ہوا دینے کے لیے سامنے آیا ہے۔ موصوف نے کہا کہ امرناتھ یاترا سے یہاں ماحولیات کا تواز ن بگڑ چکا ہے اور گزشتہ سال کے سیلا ب کی ایک وجہ ماہرین امرناتھ یاتراکو طول دینا بھی سمجھتے ہیں ۔ قیم جماعت نے کہا کہ جماعت اسلامی ان فرقہ پرست عناصر کی ریشہ دوانیوں کی مذمت کرتی ہے اور کشمیری عوام کو سازشوں سے خبردار رہنے کی تلقین کرتی ہے۔ برما میں مسلمانوں کے قتل عام پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے قیم جماعت نے کہا کہ مسلمانوں کو بودھ بھکشو تہ تیغ کررہے ہیں ، اُن کے بچوں کو زندہ جلایا جارہا ہے ، لاکھوں مسلمانوں بے وطن ہوکر در بدر گھوم رہے ہیں اور عالمی طاقتوں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی۔ یواین او اور سیکورٹی کونسل کی خاموشی معنی خیز ہے اور برمی مسلمانوں کے تئیں غفلت شعاری برتی جارہی ہے۔ قیم جماعت نے کہا کہ اگر چہ ترکی اور پاکستان کے اقدامات سے اُمیدیں پیدا ہوئی ہیں لیکن اس کے باوجود اگر بودھوں کوبرمی مسلمانوں کے ساتھ ظلم و جبر کا یہ سلسلہ جاری رکھنے دیا گیا تو مستقبل قریب میں دنیا کو بودھ دہشت گردی سے سنگین خطرہ لاحق ہوگا۔قیم جماعت نے کہا کہ ایک منظم سازش کے تحت ریاست جموں وکشمیر میں منشیات اور بے حیائی کو فروغ دیا جارہا ہے۔ سیاحت کے فروغ کے نام پربے حیائی اور فحاشیت کو سرکاری سطح پر فروغ دیا جارہا ہے اس کی مثال حکومت وقت کے ذریعے سے فلمی دنیا کے لوگوں کو وادی آنے کی دعوت دینا ہے۔ اجتماع سے جن دوسرے مقررین نے خطاب کیا اُن میں نائب امیر جماعت نذیر احمد رعنا، ناظم شعبہ دعوت و تربیت طارق احمد مکی، معاون ناظم شعبہ دعوت و تربیت غازی معین الاسلام ندوی، امیر ضلع بارہمولہ(ب) عبدالمجید، معروف دانشور حسن زینہ گیری، ناظم اعلیٰ اسلامی جمعیت طلبہ عمر سلطان، قیم ضلع بڈگام خاکی محمد فاروق کے علاوہ پیر غیاث الدین شامل ہیں ۔

Read 325 times

Al'Quraan

The woman and the man guilty of illegal sexual intercourse, flog each of them with a hundred stripes. Let not pity withhold you in their case, in a punishment prescribed by Allah, if you believe in Allah and the Last Day. And let a party of the believers witness their punishment. (This punishment is for unmarried persons guilty of the above crime but if married persons commit it, the punishment is to stone them to death, according to Allah's Law).

Al'Quraan Surah Noor

Prophet Mohammad PBUH

Narrated: Abu Huraira (R.A) that a man said to the Prophet, sallallahu 'alayhi wasallam: "Advise me! "The Prophet (PBUH) said, "Do not become angry and furious." The man asked (the same) again and again, and the Prophet said in each case, "Do not become angry and furious." [Al-Bukhari; Vol. 8 No. 137]

Sunan Abu-Dawud.

eXTReMe Tracker