Top Panel
You are here: HomeNewsانسانی حقوق کی پامالیوں کی کڑی مذمت کی، مسئلہ کشمیر ایک اٹل حقیقتقیم جماعت
Sunday, 10 May 2015 16:36

انسانی حقوق کی پامالیوں کی کڑی مذمت کی، مسئلہ کشمیر ایک اٹل حقیقتقیم جماعت

Rate this item
(0 votes)

ڈیلی ویجروں اور آر ٹی اساتذہ کے حقوق پر شب خون مارا جارہا ہے،

انسانی حقوق کی پامالیوں کی کڑی مذمت کی، مسئلہ کشمیر ایک اٹل حقیقتقیم جماعت

جماعت اسلامی کپواڑہ (ب) کے سالانہ اجتماع میں ہزاروں لوگوں کی شرکت

 سرینگرجماعت اسلامی جموں وکشمیر ضلع کپواڑہ(ب) کا سالانہ اجتماع آج فروٹ منڈی ہندواڑہ میں منعقد ہوا۔ اجتماع میں دور دراز علاقوں سے آئے ہوئے ہزاروں لوگوں نے شرکت کی۔ اجتماع میں امیر جماعت اسلامی محمد عبداللہ وانی نے سورہ بقرہ کی آیت ١٢/اور ٢٢/کی روشنی میں درس قرآن پیش کرتے ہوئے کہاکہ اسلام میں عبادت کا مقام یہ ہے کہ مسلمانوں میں انفرادی سطح پر بھی اور اجتماعی سطح پر بھی تقویٰ شعاری پیدا ہوجائے۔ تقویٰ حاصل ہونے کی صورت میں دلوں میں خدا خوفی پیدا ہوجاتی ہے اور جب سارے سماج میں عام لوگوں کے اندر اللہ کا ڈر پیدا ہوجاتا ہے تو فساد فی الارض کے تمام راستے بند ہوجاتے ہیں ۔ تقویٰ ہو تو سماج میں خدا پرستی اور انسان دوستی کا جذبہ پیدا ہوجاتا ہے۔ امیر جماعت محمد عبداللہ وانی نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی جموں وکشمیرجو دعوت پیش کرتی ہے اُس کا بنیادی مقصد سماج کو اسلامی خطوط پر استوار کرنا ہے اور ایک ایسے صالح سماج کی بنیاد رکھنا ہے۔ محمد عبداللہ وانی نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی اللہ کی زمین پر اللہ کا نظام قائم کرنا چاہتی ہے ۔نائب امیر جماعت نذیر احمد رعنا نے درس حدیث پیش کرتے ہوئے کہا کہ دین خیر خواہی کا نام ہے اور خیر خواہی انسان دوستی کے جذبے کا دوسرا نام ہے۔موصوف نے کہا کہ امیر کی اطاعت ایمان کا ایک حصہ ہے اور اسلام نے امیر کی اطاعت پر خاص زور دیا ہے۔خطاب عام میں قیم جماعت اسلامی جموں وکشمیر ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے کہا ریاست میں انسانی حقوق کی مسلسل پامالیاں ہورہی ہیں اور انصاف کے تمام ادارے سرکاری ایجنسیوں کی طرفداری کرکے انصاف کا خون کررہے ہیں ۔ انہوں نے کرائم برانچ کے ذریعے سے طفیل متوقتل کیس کو un traced قرار دئے جانے کے واقعے کو بھونڈا مذاق قرار دیتے ہوئے کہا کہ دن کے اُجالو ں میں پولیس اہلکار ایک معصوم نوجوان پر شلنگ کرکے اُسے ابدی نیند سلا دیتے ہیں اور پانچ سال تک تحقیقات کا ڈھونگ رچاکر بالآخرمجرمین کو جان بوجھ کرun traced قرار دے کر انصاف کا خون کیا گیا۔قیم جماعت نے کہا کہ نارہ بل کے سہیل احمد کے قتل میں ملوث پولیس اہلکاروں کا ایف آئی آر میں نام درج نہ کرنا بھی اس بات کی پیشگی اطلاع دے رہی ہے کہ اس کیس کے سلسلے میں بھی مجرمین کو سزا نہیں دی جائے گی۔ قیم جماعت نے کہا کہ یہاں انصاف ناپید ہے اور موجودہ نظام میں اس کی توقع بھی نہیں کی جاسکتی ہے کہ جو ہاتھ کشمیریوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں اُن کے ہی ایوانوں میں انصاف کے تقاضے بھی پورے کیے جائیں گے۔ ڈاکٹر عبدالحمید فیاض نے عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ ریاست جموں وکشمیر میں ہورہی ظلم و زیادتیوں کا سنجیدگی کے نوٹس لیں اور حکومت ہند پر دباؤ ڈالیں کہ وہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کا سلسلہ فوری طور بند کریں ۔قیم جماعت نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک اٹل حقیقت ہے اور اس سے مسئلے کا کوئی بھی فریق حقائق سے فرار حاصل نہیں کرسکتا۔ موصوف نے کہا کہ جماعت اسلامی جموں وکشمیر اس مسئلے کے حل کے لیے دہائیوں سے قربانیاں دیتی آئی ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ اس مسئلے کا حل اقوام متحدہ کی قرار دادوں یا پھر سہ فریقی مذاکرات کے ذریعے سے نکالا جائے، تاکہ برصغیر میں نیوکلیر جنگ کا خطرہ ٹل جائے اور کروڑوں عوام کی ترقی کی راہیں کھل سکیں ۔ہندوستان میں فرقہ پرستوں کی جانب سے مسلمانوں کا قافیہ حیات تنگ کیے جانے کی کڑی الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے موصوف نے کہا کہ مسلمانانِ ہند کا آئے روز مختلف بہانوں سے جینا حرام کیا جارہا ہے او ر جماعت اسلامی اس فرقہ پرست ذہنیت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے۔ گجرات میں مسلمان بستیوں کو شہر کی تجدید و تزائین کے نام پر ہٹانے کا حوالہ دیتے ہوئے موصوف نے کہا کہ وہاں مسلمانوں کی اجتماعیت کو توڑنے کے لیے سینکڑوں گھرانوں پر مشتمل مسلمان بستی کو مسمار کر دیاگیا اور اُنہیں متبادل جگہ پرپلاٹ فراہم کرنے کا وعدہ بھی کیا گیا۔ اب اُن کا شیرازہ بکھرنے کے لیے مختلف علاقوں میں ایک ایک دو دو خاندانوں کو بسایا جارہا ہے۔ اس اقدام سے نہ صرف مسلمانوں کی اجتماعیت پارہ پارہ ہوگئی بلکہ گجرات جیسے فرقہ پرست ذہنیت کی حامل ریاست میں مسلمانوں کی زندگیاں بھی خطرے میں پڑ گئی ہیں ۔ موصوف نے مزید کہا کہ دوہرا معیار اپنایا جارہا ہے۔ گجرات میں اقلیتی طبقے میں شامل مسلمان بستی کو ایک جگہ سے ہٹا کر الگ الگ علاقوں میں بسایا جارہا ہے اور ریاست جموں وکشمیر میں کشمیری پنڈتوں کے لیے الگ ہوم لینڈ کی باتیں کی جارہی ہیں ۔قیم جماعت نے ڈیلی ویجرملازمین اور رہبر تعلیم اساتذہ کے ساتھ حکومت کی جانب سے روا رکھے گئے ناروا سلوک کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مہذب دنیا میں اگر چہ غلامی کا تصور ختم ہوچکا ہے لیکن ہمارے یہاں قلیل اجرات پھر پڑھے لکھے نوجوانوں کوبندھوا مزدور بناکر غلامی کی زندگی بسر کرنے پر مجبور کیا جارہا ہے۔ ایک جانب ڈیلی ویجراور رہبر تعلیم اساتذہ قلیل تنخواہوں پر کام کررہے ہیں دوسری جانب حکومت وقت کئی کئی مہینوں سے اُن کی تنخواہیں واگزار نہیں کررہی ہیں ۔ بیس بیس سال سے ڈیلی ویجر ملازمین کو مستقل نہیں کیا جارہا ہے اور جب یہی ملازمین اپنے جائز حقوق کی باز یابی کے لیے پُر امن احتجاج پر اُتر آتے ہیں تو پولیس اُن کے خلاف طاقت کا استعمال کرتی ہے۔ قیم جماعت نے ملازمین کے خلاف حالیہ پولیس کارروائیوں کی شدید الفاظ میں نکتہ چینی کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ ڈیلی ویجروں اور رہبر تعلیم اساتذہ کی جائز مانگوں کو تسلیم کرلیا جانا چاہیے۔عالم اسلام کی موجودہ صورتحال پر بات کرتے ہوئے موصوف نے کہا کہ اس وقت اُمت مسلمہ شدید مشکلات سے دوچار ہے بالخصوص تحریکات اسلامی اپنوں اور غیروں کی ستم رانیوں کا شکار بنا دی گئی ہیں ۔ مصر میں اخوان المسلمون کے لیڈران اور کارکنان کی گرفتاریاں اور سزائیں اور بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی پر سرکاری عتاب عالم اسلام کے لیے کوئی نیک شگون والی بات نہیں ہے۔ یہ تحریکات اُمت مسلمہ کو ذلت اور پستی سے نکالنے کے لیے جدوجہد کررہی ہیں اور باطل طاقتیں نام نہاد روشن خیال مسلم حکمرانوں کا سہارا لے کر تحریکات کا راستہ روکنے کی کوششیں کررہی ہیں ۔ قیم جماعت نے تحریکات اسلامی کے خلاف ظلم و زیادتیوں کے اس سلسلے کی کڑی الفاظ میں مذمت کی۔اجتماع سے جن دوسرے مقررین نے خطابات کیے ہیں اُن میں سابق قیم جماعت غلام قادر لون نے ’’اُدخلو افی السلم کافۃ‘‘ کے عنوان پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسلام میں پورے کا پورا داخل ہوجانے کا مطلب یہ ہے کہ مسلمان اسلامی عقائد اور تعلیمات کی روح کو سمجھیں ۔ لادین اور باطل طاقتوں کے پیچھے نہ چلیں ۔ معاون ناظم شعبہ دعوت و تربیت غازی معین الاسلام ندوی نے خطاب بہ نوجوانان بعنوان’’ جوانوں کو میری آہِ سحر دے‘‘ پیش کیا۔ امیر ضلع کپواڑہ(ب) محمد اسماعیل لون نے ابتدائی و اختتامی خطاب میں جماعت کی دعوت اور اجتماعات منعقد کرنے کے مقاصد پر روشنی ڈالی ۔ ناظم اعلیٰ اسلامی جمعیت طلبہ جموں وکشمیر عمر سلطان نے ’’پیغام جمعیت‘‘ کے موضوع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمعیت طلبہ مسلم نوجوانوں کی زندگی سنوارنے کا کام کررہی ہے اور ملت اسلامیہ سے وابستہ تمام نوجوانوں کو اس تنظیم کاحصہ بننا چاہیے۔نماز عصر کے ساتھ ہی یہ اجتماع اپنے اختتام کو پہنچ گیا۔

Read 308 times

Al'Quraan

The woman and the man guilty of illegal sexual intercourse, flog each of them with a hundred stripes. Let not pity withhold you in their case, in a punishment prescribed by Allah, if you believe in Allah and the Last Day. And let a party of the believers witness their punishment. (This punishment is for unmarried persons guilty of the above crime but if married persons commit it, the punishment is to stone them to death, according to Allah's Law).

Al'Quraan Surah Noor

Prophet Mohammad PBUH

Narrated: Abu Huraira (R.A) that a man said to the Prophet, sallallahu 'alayhi wasallam: "Advise me! "The Prophet (PBUH) said, "Do not become angry and furious." The man asked (the same) again and again, and the Prophet said in each case, "Do not become angry and furious." [Al-Bukhari; Vol. 8 No. 137]

Sunan Abu-Dawud.

eXTReMe Tracker